حضرت علی(علیہ السلام) اور شھادت

Thu, 06/15/2017 - 11:34

خلاصہ: امام علی(علیہ السلام) کی شھادت کا متمنی ہونا۔

حضرت علی(علیہ السلام) اور شھادت

بسم اللہ الرحمن الرحیم
     رسول خدا(صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم) نے مختلف مقامات پر حضرت علی(علیہ السلام) کی شھادت کی خبردی ہے، جب جنگ خندق میں عمر ابن عبدود نے امام(علیہ السلام) کو زخمی کیا تھا، رسول خدا(صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم) نے آپ کی پیشانی کو باندھا اور فرمایا: میں اس وقت کہاں رہونگا جب  تمھاری داڑھی کو خون سے رنگین کیا جائیگا[مناقب، ج۲، ص۶۱]۔
     جنگ احد میں آپ کے بدن پر ستر زخم لگے، امام علی(علیہ السلام) نے اسی زخمی حالت میں ۲۵سال کی عمر میں رسول خدا(صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم) سے عرض کی: حمزہ اور دوسرے لوگ شھید ہوگئے لیکن شھادت مجھے نصیب نہیں ہوئی، اس وقت رسول خدا(صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم) نے فرمایا: علی آپ بھی شھید ہونگے، لیکن تم شھادت پر کس طرح صبر کروگے؟
     امام علی(علیہ السلام) نے فرمایا: اے رسول خدا(صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم) شھادت پر صبر نہیں بلکہ شکر اداء کرنا چاہئے[بحار الأنوار، ج۳۲، ص۲۴۱]۔
     انّیس رمضان المبارک کی صبح میں جب آپ کو ابن ملجم معلون نے ضربت لگائی اس وقت امام(علیہ السلام) نے فرمایا: «فُزْتُ‏ وَ رَبِ‏ الْكَعْبَة»[مناقب، ج۳، ص۳۱۲]۔
*ابن شهر آشوب مازندرانى، محمد بن على‏، مناقب آل أبي طالب عليهم السلام‏، علامه‏، قم‏، ۱۳۷۹ق۔
*مجلسى، محمد باقر بن محمد تقى، بحارالانوار، دار إحياء التراث العربي،‏ بيروت،‏ ۱۴۰۳ق۔

Add new comment

Plain text

  • No HTML tags allowed.
  • Web page addresses and e-mail addresses turn into links automatically.
  • Lines and paragraphs break automatically.
3 + 3 =
Solve this simple math problem and enter the result. E.g. for 1+3, enter 4.
www.welayatnet.com
Online: 30