رہبر معظم انقلاب اسلامی : ایران سخت ردعمل کا اظہار کرے گا.

Sun, 04/16/2017 - 11:11

چکیده:

رہبر معظم انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے فرمایا ہےکہ ایرانی حاجیوں کی معمولی سی بھی بے احترامی اور سانحہ منٰی میں جاں بحق ہونے والوں کے جنازوں کے حوالے سے ذمہ داریوں پر عمل نہ کرنے کی صورت میں سعودی حکومت کو ایران کی طرف سے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا۔

رہبر معظم انقلاب اسلامی : ایران سخت ردعمل کا اظہار کرے گا.

اسلامی جمہوریہ ایران کی ملٹری یونیورسٹیوں کی سالانہ تقریب میں فوجی جوانوں سے خطابکرتے ہوئے رہبر معظم انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے فرمایا ہے کہ ایرانی حاجیوں کی معمولی سی بھی بے احترامی اور سانحہ منٰی میں جاں بحق ہونے والوں کے جنازوں کے حوالے سے ذمہ داریوں پر عمل نہ کرنے کی صورت میں سعودی حکومت کو ایران کی طرف سے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا۔
آپ نے سانحہ منٰی پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئےفرمایاکہ اس سانحے میں ہزاروں کی تعداد میں حجاج کرام بالخصوص ایرانی حاجیوں کا جاں بحق ہو جانا عالم اسلام اور ایرانی عوام کے لئے ایک بڑی مصیبت اور سوگ کا مقام ہے۔
ولی امر مسلمین جہاں نے اسلامی ممالک منجملہ ایران کی شرکت سے ایک تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کی ضرورت کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ ہم اس حادثے کی وجوہات کے بارے میں قبل از وقت کوئی حتمی رائے نہیں دے سکتے لیکن ہم یہ سمجھتے ہیں کہ سعودی عرب کی حکومت نے منٰی کے زخمیوں کے حوالے سے اپنی ذمہ داریوں پر صحیح عمل نہیں کیا ہے۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی  نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ سعودی عرب سانحہ منٰی میں جاں بحق ہونے والوں کے جنازے منتقل کرنے میں اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کر رہا فرمایا کہ ایران نے اب تک صبر و تحمل سے کام لیا ہے اور عالم اسلام میں اسلامی ادب و احترام اور برادری و بھائی چارے کی حرمت کا خیال رکھا ہے لیکن انہیں جان لینا چاہئے کہ اگر ضروری ہوا تو ایران اپنے تمام وسائل و ذرائع کو بروئے کار لاتے ہوئے ان لوگوں کا سخت جواب دے گا جو اذیت پہنچا نےاور پریشانی کا سبب بن رہے ہیں۔
ولی قفیہ حضرت امام خامنہ ای نے فرمایاکہ آج کی جاہلیت نے عیدالاضحٰی کی خوشی کو منٰی کے ہولناک اور دردناک حادثے سے عزا میں تبدیل کر دیا لیکن ہم دعا کرتے ہیں کہ خداوند عالم مسلم اقوام کی ان فداکاریوں اور قربانیوں کو قبول فرمائے۔
 رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فوجی جوانوں اور افسروں کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایاکہ مسلح افواج کی آمادگی کا مطلب صرف یہ نہیں ہے کہ جنگ میں دشمن پر کامیابی حاصل کی جائے بلکہ ملک کو دشمنوں کے ناپاک عزائم اور بدنیتی سے بھی محفوظ رکھنا ضروری ہے۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے دشمنوں کے ناپاک عزائم سے ملک کی حفاظت کے لئے مسلح افواج کی آمادگی پر تاکید کرتے ہوئے فرمایا  کہ مسلح افواج آمادہ اور ہتھیاروں سے لیس رہیں گی تو دشمن میں جرأت نہیں ہوگی کہ وہ بدنیتی پر مبنی کوئی قدم اٹھائے۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی نے یمن کے نہتے شہریوں پر سعودی حکومت کے وحشیانہ حملوں کا ذکر کرتے ہوئے فرمایا کہ جب مسلح افواج میں ایمان نہیں ہوتا تو ان میں کمزور لوگوں کا قتل عام کرنے کا جذبہ پیدا ہو جاتا ہے اور وہ جدید ترین ہتھیاروں سے یمن کے بے سہارا شہریوں پر بمباری کرتی ہیں۔اورجن فوجوں میں ایمان کی رمق نہیں ہوتی وہ خطرات کے میدان سے جہاں انہیں انسانی تشخص کا مظاہرہ کرنا چاہئے غائب ہوجاتی ہیں لیکن جب نہتے شہریوں کا سامنا ہوتا ہے تو ان کے مقابلے میں بہادر بن جاتی ہیں۔

-------------------------------

newsnoor.com

Add new comment

Plain text

  • No HTML tags allowed.
  • Web page addresses and e-mail addresses turn into links automatically.
  • Lines and paragraphs break automatically.
4 + 3 =
Solve this simple math problem and enter the result. E.g. for 1+3, enter 4.
www.welayatnet.com
Online: 30